پنڈی بھٹیاں محکہ ڈاک کے اکثر ملازمین گھر بیٹھے تنخواہیں بٹورنے لگے

پنڈی بھٹیاں (ثقلین علی)محکہ ڈاک کے ملازمین شہریوں سے بدمعاشی کرنے لگے اکثر ملازمین گھر بیٹھے تنخواہیں بٹورنے لگے.شہریوں نے میڈیا سے شکایات کے انبار لگا دئیے
پنڈی بھٹیاں : پوسٹ آفس کے ملازمیں ڈاک گھروں میں پہنچانے کی بجائے اپنے ڈاک لیکر اپنے گھروں کا رخ کرتے ہیں اکثر شہریوں کی ڈاک رہ جاتی ہے جس میں طلباء کی ڈیٹ شیٹ تک شامل ہے جبکہ اگر کوئی ان سے سوال کرے تو عملہ انتہائی بدتمیزی پیش آتے ہیں یہ کہنا ہے شہریوں کا. شہریوں نے پوسٹ ماسٹر کے متعلق بھی کہا کہ عموما دفتر میں یہاں پر عورتوں پر ڈورے ڈالتا ہے جس سے شریف لوگوں کا داخلہ بہت مشکل ہو گیا ہے. وفاقی وزیر کے دعوے دھرے کے دھرے تحصیل میں UMS کی بھ سہولت میسر نہیں بزرگ شہری پنیشن لینے جاتے ہیں تو ان کو گھٹنوں انتظار کرنا پڑتا ہے جو عملہ موجود ہو وہ خوش گپوں لگاتے نظر آتے ہیں اور ڈیٹ شیٹ جیسی قیمتی ڈاک کو بھی نظر انداز کر دیا جاتا ہے طلبہ کا کہنا ہے کہ ہر دفعہ پرنٹ نکلوا کر پیپر دینا پڑتا ہے اور جب بھی کوئی ملازم ڈاک لے کر آتاہے تو تیل کے بھی پیسے کا مطالبہ کرتا ہے اور ایکسٹرا چائرجزبھی وصول کرتا ہے اگر رسید طلب کی جائے تو ڈاک واپس لے لینے کی دھمکی دیتے ہیں محکہ ڈاک کے ملازمین دھمکیاں دیتے ہیں کر لو جو کرنا ہے جس کو مرضی شکایت کرو ہمارا کوئی کچھ نہیں بگاڑ سکتا
عوام نے اعلی حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ ایسے کرپٹ اور کام نہ کرنے والے ملازمین کو گھر بھجا جائے اور ایماندار اور فرض شناس عملہ تعینات کیا جائے.

This post has been Liked 0 time(s) & Disliked 0 time(s)